122

پپو کی کہانی 3

پپو کا جب ذکر آتا ہے تو آپ لوگ شاید اسے ایک “کیریکٹر” یا کوئی فکشن ٹائپ چیز سمجھتے ہونگے، حالانکہ ایسا نہیں، یہ دلچسپ انسان حقیقت میں وجود رکھتا ہے، اس سے ملو تو”مل مل” جانے یعنی بار بار ملنے کو دل کرتا ہے، لیکن پپو اس ” مل مل” کو ایک حد میں رکھ کے “ململ” بن جاتا ہے اورکافی مشکل سے گھل ملتا ہے۔۔ لوگ اس حیرت کا بھی اظہار کرتے ہیں کہ پپو ہے تو پان والا لیکن اسے میڈیا کے بارے میں اتنی گہرائی اور تفصیل سے کیسے پتہ لگتا ہے، بہت سی باتیں وہ پہلے ہی بریک کردیتا ہے، اب مسئلہ یہ ہے کہ کچھ چیزیں شایدخداداد ہوتی ہیں،پپو اگر پان کا کاروبار کرتا ہے تو کون سے آئین و قانون میں لکھا ہے کہ اسے صرف پان کے بارے میں ہی علم رکھنا چاہیئے اور میڈیا کی طرف توجہ نہیں دینی چاہیئے۔۔
پچھلے دنوں کراچی جانا ہوا تو پپو سے کافی طویل نشستیں ہوئیں۔۔ میں نے پلاننگ کے تحت انہیں میڈیا کے حوالے سے چھیڑا،مجھے بھی کبھی کبھی شک ہونے لگتا ہے کہ وہ اکثر ایسی خبریں کیسے دے دیتا کہ اس چینل کے ورکرز کو پتہ نہیں ہوتا اور پپو پہلے وہ خبر پھوڑ دیتا ہے،اس حوالے سے میرے پاس کئی مثالیں بھی ہیں، لیکن انہیں فی الحال ڈسکس نہیں کررہا ۔۔پپو کے چاہنے والے یقینی طور پر اس بات کے گواہ ہونگے۔۔
تو بات ہورہی تھی کہ پپو میڈیا کے حوالے سے کتنا جانتا ہے ، چیک کرلیا جائے، یہی سوچ کہ پپو سے لفظی چھیڑچھاڑ شروع کی۔۔کئی مواقع پر انہیں اشتعال بھی دلایا گیا تاکہ ان کے منہ سے سچ نکلے، اور بعض بار یہ نوبت آئی کہ ان کی بات کاٹ کر دوسری بات شروع کرنی پڑی۔۔
پپو بھائی زیادہ تر رات ایک بجے کے بعد فارغ ہوجاتے ہیں، کورنگی چھ کے اسٹاپ پہ تقریبا سناٹا طاری ہوجاتا ہے اور وہ اپنا کیبن بند کرنے کی تیاری شروع کردیتے ہیں۔۔ اس دوران وہ بہت موڈ میں ہوتے ہیں یہی وہ موقع تھا جب ہم ان کے کیبن پہنچے،سامان وہ سمیٹ چکے تھے، ہم گئے تو چائے منگا لی۔۔ حال احوال پوچھا، ہم نے ان کے کاروبار کا پوچھا۔۔ رسمی گفتگو کے بعد اصل ٹارگٹ پہ آئے۔۔
پپو بھائی ، میڈیا کے حوالے سے اتنا کچھ کیسے جانتے ہو؟
عمران بھائی، میڈیا کے حوالے سے جو تھوڑا بہت علم ہوتا ہے، آپ سے شیئر کرلیتا ہوں۔۔
پپوبھائی، تھوڑا بہت کہہ کر آپ”چول” ماررہے ہو،اندرکی خبریں کہاں سے لاتے ہو؟
عمران بھائی،چول تو آپ ماررہے ہیں میری سورس پوچھ کے۔۔کیا کسی سے اس کی سورس پوچھی جاتی ہے؟
نہیں یار، میرا مطلب تھاتمہارا یہ کیبن ہے،تم تک یہ خبریں کیسے پہنچتی ہیں؟
عمران بھائی، غیرضروری سوال ہے۔۔
پپوبھائی، بہت ضروری ہےیہ جاننا، آپ نہیں جانتے آپ کو کراچی سے لے کر پشاور تک تمام میڈیا چینلز کے لوگ غائبانہ طور پر جانتے ہیں، کچھ تو اس حد تک ایمان لاچکے ہیں کہ پپو نے کہہ دیا ہے ، پپو کی مخبری ہے تو پھر یہ لازمی اور سوفیصد درست ہوگی۔۔
یہ تو اللہ کا کرم ہے عمران بھائی، اور آپ کا ٹیلنٹ بھی ہے کہ میڈیا کے حوالے سے میری اطلاعات کو مختلف پیکنگ میں پیک کرکے عوام تک پہنچاتے ہیں۔۔
پپوبھائی میرا خیال ہے ہم دونوں ایک دوسرے کی تعریفوں کے علاوہ کچھ اور بات کرتے ہیں۔۔
کیا بات کریں؟
میڈیا کے حوالے سے مجھے کچھ بتاؤ، میں جاننا چاہتا ہوں تمہاری کتنی نالج ہے؟
یار حد ہوگئی، عمران بھائی۔۔ ابھی تک یقین نہیں آیا آپ کو ۔۔۔ خیر پوچھیں کیا پوچھنا چاہتے ہیں؟؟۔۔۔ کیا آپ یہ جاننا چاہتے ہیں کہ عامر متین اور متین حیدر کا آپس میں بیٹے اور باپ کا رشتہ ہے۔۔ کیا یہ جاننا چاہتے ہیں کہ عمران یعقوب اور ہارون یعقوب بھائی بھائی ہیں۔۔ کیا آپ کو اس کا علم ہے کہ شاہد شہزاد اور خرم شہزاد آپس میں کزنز ہیں۔۔چلو یہ بھی جان لو کہ ۔۔۔
یار خدا کیلئے،پپو بھائی، بس کردو، جتنے لوگوں کے تم نے نام لئے ہیں سب کو میں جانتا ہوں، یہ سب الگ الگ لوگ ہیں ان کا ایک دوسرے سے کوئی تعلق نہیں۔۔
عمران بھائی ، ہیں تو میڈیا کے لوگ یہ سب۔۔۔
ہاں میڈیا سے ہی ہیں، لیکن آپس میں کوئی رشتے داری نہیں، تم یہ بتاؤ کہ بول کے خلاف کوئی مخبری کیوں نہیں دیتے؟؟
عمران بھائی صرف آپ کی وجہ سے۔۔۔ ورنہ قسم سے خبریں اتنی ہوتی ہیں کہ آپ خود پریشان ہوجائیں۔۔ مجھے پتہ ہے کہ آپ کا بول سے ایک خاص قسم کا لگاؤ ہے، آپ نے اس کی بحالی کیلئے سڑکوں پر جنگ لڑی۔۔ اس دوران آپ کے گھریلو حالات مجھ سے ڈھکے چھپے نہیں، آپ کو بول بحالی کی جدوجہد کے دوران جو آفرز ملیں وہ بھی مجھے پتہ ہے، اور آفرز کرنے والوں کو آپ نے کیا جواب دیئے یہ بھی جانتا ہوں۔۔
پپو بھائی ، ان باتوں کو چھوڑو، میرے سوال کا جواب نہیں ملا ابھی تک۔۔۔ہم نے پپو کی بات درمیان میں کاٹ کر کہا۔۔
عمران بھائی، بول کے خلاف خبریں چاہیئے تو کسی اور سے لے لو، کم سے کم میں کوئی خبر نہیں دے سکتا۔۔
پپو کے صاف انکار پر مجھے حیرت ہوئی، پپو کو غور سےدیکھا، پپو خاموشی سے اکا دکا باہر رہ جانے والا سامان بھی کیبن کے اندر رکھنے لگا اورمیں سوچ رہا تھا کہ پپو منع کیوں کررہا ہے؟
یار پپو، اگر تمہیں کوئی چینل آفر کرے توکیا تم کوئی چینل جوائن کروگے؟
عمران بھائی میں لعنت بھیجتا ہوں میڈیا کی نوکری پہ، جہاں جاکر انسان کی اپنی زندگی ختم ہوجاتی ہے، وہ گھر والوں سے کٹ جاتا ہے، سوشل لائف تباہ ہوجاتی ہے۔۔ دومہینے کام کرنے کے بعد ایک مہینہ کی تنخواہ ملتی ہے۔۔
پپو بھائی اتنی نفرت کیوں؟
صرف آپ کو دیکھ کے۔۔۔ آپ کو کیا ملا پچیس سال میڈیا کو دے کر۔۔۔ آج بھی پیدل گھومتے ہو، میرے پاس اپنی گاڑی ہے۔۔ آپ آج بھی کرائے کے گھر میں ہو، میرا اپنا گھر ہے۔۔ آپ آج بھی ایک ماہ نوکری نہ ہوتو اگلے مہینے گھر نہیں چلاسکتے۔۔ میں ایک مہینہ کام نہ کروں پھر بھی ایک سال بیٹھ کے کھاسکتا ہوں۔۔ آپ مہینے کے آخر میں ہاتھ کھینچ کے خرچ کرتے ہو، میرا ہاتھ ہر وقت کھلا رہتا ہے۔۔ آپ ۔۔
بس کردے یار، آج تو ذلیل کرنے پہ ہی اترا ہوا ہے۔۔
عمران بھائی ، یہی تلخ حقیقت ہے، آپ جس طرح سچائی کا پرچار کرتے ہو، اسی طرح اپنی ذات کے حوالے سے بھی سچ سننے کا حوصلہ پیدا کریں۔۔ آپ کی سچی باتیں بھی دوسروں کو اسی طرح کڑوی لگتی ہوں گی۔۔
لیکن یار، میڈیا میں سب تو میری طرح کے نہیں، اکثر کا لائف اسٹائل بہت شاندار ہے۔۔
عمران بھائی، جن کا لائف اسٹائل بہت شاندار ہے، جو بہترین گاڑیوں میں گھومتے ہیں، ہر دوتین ماہ بعد بیرون ملک تفریح کیلئے جاتے ہیں، اپنے گھر رکھتے ہیں، آئی فون رکھتے ہیں، مہنگی سگریٹیں اور ولایتی شرابیں پیتے ہیں۔۔ ان سے یہ بھی پوچھنا کہ کیا یہ سب حلال کی کمائی سے کرتے ہو؟؟
یار حلال ہی ہوتا ہوگا، حرام کا فتویٰ کیوں لگارہے ہو؟
عمران بھائی، اگر یہ سب حلال سے ہوتا ہے تو پھر مجھے آپ کی اہلیت پر شک ہے، آپ دنیا کے نالائق ترین انسان ہیں کیونکہ یہ سب چیزیں آپ حلال کی کمائی سے آج تک نہیں کرسکے۔۔۔چلو اسٹول سے اٹھو، یہ بھی اندر رکھیں پھر چلتے ہیں لانڈھی چار ۔۔۔
لانڈھی چار، تھانے میں کوئی کام ہے کیا؟
نہیں یار، تھانے کے پاس جوبلی اسنیکس پر چلتے ہیں، اسنیکس کھائیں گے کیونکہ میری باتوں سے آپ کے سینے پہ “اسنیک” لوٹ رہے ہوں گے۔۔
اسنیک تو نہیں چوہے ضرور دوڑ رہے ہیں۔۔
پپو نے کیبن کو تالے ڈالے۔۔اور کہنے لگے۔۔۔ عمران بھائی۔۔ یہ دیکھو ، کیبن پہ تالے ڈال دیئے۔۔ اب صبح یہ تالے کھول دونگا۔۔ بس قسمت اور نصیب کے ساتھ بھی ایسا ہی گیم ہوتا ہے، ہم سمجھتے ہیں قسمت اور نصیب ہی خراب ہے،لیکن کبھی یہ نہیں سوچتے کہ اگر آج برا وقت چل رہا ہے تو کل اچھا بھی آئے گا ۔۔ کچھ دیر پہلے تک میں اسی کیبن پہ دن بھر بیٹھ کر دھڑادھڑ کماتا رہا ہوں، لیکن اب اس پہ تالے پڑ گئے۔۔ یہی انسان کے ساتھ ہوتا ہے۔۔ کبھی اچھا اور کبھی براوقت آتا جاتا رہتا ہے۔۔ بس اچھے حالات میں کبھی ناشکری نہ کرنا اور برے وقت میں کبھی صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑنا۔۔ پھر دیکھنا ۔۔ وقت جیسا بھی ہوگا آپ کا غلام ہوگا۔۔ کیونکہ وہ آپ کو کچھ بگاڑ نہیں سکے گا۔۔
پپو کی فلسفیانہ باتیں جاری تھیں۔۔اور ہم جوبلی اسنیکس پر ڈنر کررہے تھے۔۔۔ پپو کہانی ابھی جاری ہے۔۔۔

Facebook Comments

اپنی رائے کا اظہار کریں