Aamir Liaquat clarification 92

غلطی مان لینی چاہیئے

غلطی مان لینی چاہیئے۔۔

Aamir Liaquat clarificationبول پہ آن ائر استعفے کے بعد ڈاکٹر عامر لیاقت کی ایک وڈیو سوشل میڈیا پہ وائر ل ہوئی، یہ وڈیو ہماری ٹیم کے پاس بھی پہنچی، مجھے بتایا گیا کہ یہ تازہ وڈیو ہے، میرا چونکہ ڈاکٹر عامر لیاقت سے رابطہ رہتا ہے اور اس وڈیو کی میرے پاس آنے سے پہلے ڈاکٹر صاحب کے واٹس ایپ گروپ میں فہد مصطفی کے حوالے سے لگی میری خبر پر ہماری بات بھی ہوئی جسے انہوں نے غلط قرار دیا، ڈاکٹر صاحب چونکہ دبئی میں تھے اس لئے غالب امکان تھا کہ ممکن ہے وہ عمرے کی ادائیگی کیلئے سعودی عرب چلے گئے ہوں، پھر اس وڈیو میں وہ اگست کے مہینے کا بھی ذکر کررہے تھے۔۔جب یہ وڈیو لگائی تو عامر سید سمیت کچھ دوستوں نے اسے پرانی قرار دیا، ان سب کو میں نے کہا پرانی وڈیو کا کوئی ثبوت ہے ، کوئی لنک ہے تو دے دیں، میں معذرت لگادونگا۔۔ لیکن تاحال کوئی لنک نہ مل سکا مگر وڈیو پوسٹ ہونے کے اگلے روز ڈاکٹر عامر لیاقت نے گروپ میں وضاحت کی کہ یہ وڈیو گزشتہ سال کی ہے۔۔جمعہ کی شب میری طبیعت کافی ناساز تھی اس لئے میں روٹین سے ہٹ کر آف لائن ہوکر جلد سوگیا، صبح چھ بجے کے قریب ڈاکٹر صاحب کی مسڈ کال بھی آئی تھی ساتھ ہی ان کے ایس ایم ایس آئے تھے،لیکن میں سویا ہوا تھا۔۔ڈاکٹر صاحب کا کہنا تھا کہ یہ وڈیو پرانی ہے،ایک سال پہلے اگست میں وہ عمرے پہ گئے تھے اس وقت انہوں نے یہ وڈیو اپنے ٹوئیٹر پہ ڈالی تھی، اب جب کہ ڈاکٹر صاحب نے ازخود اس وڈیو کے پرانے ہونے کا کہہ دیا ہے تو ہم اپنی غلطی کو تسلیم کرتے ہیں۔۔ مس کمیونیکشن اور میری لاعلمی کی وجہ سے ڈاکٹر عامر لیاقت کے پرستاروں کو جو رنج پہنچا اس پر معذرت خواہ ہوں۔۔ ساتھ ہی اپنی ٹیم کے جن صاحب نے یہ وڈیو مجھ تک پہنچائی ان صاحب کو اپنی ٹیم سے خارج کرنے کا اعلان کرتے ہیں۔۔ کراچی اور لاہورسمیت ملک بھر میں موجودہماری ٹیم کی کوشش ہوتی ہے کہ میڈیا سے متعلق اندرونی خبریں آپ تک بروقت درست حالت میں پہنچے، اس میں تاخیر بھی ہوتی ہے، جس پر کچھ دوست وقتا فوقتا نشاندہی بھی کرتے ہیں۔۔یہ سب بتانے کا مقصد صرف یہ ہے کہ آج سے دو سال پہلے میں اکیلا ہی میڈیا کے فرعونوں کے خلاف لڑرہا تھا لیکن آج میرے ساتھ درجنوں گمنام سپاہی ہیں، جومختلف شہروں میں پھیلے ہوئے اور میرے شانہ بشانہ کھڑے ہیں، اور انہی گمنام دوستوں کی بدولت آج ہماری ویب سائیٹ ملک بھر میں میڈیا کی اندرونی خبروں کے حوالے سے نہ صرف منفرد شناخت رکھتی ہے بلکہ اپنی ایک ساکھ بھی رکھتی ہے، یہی وجہ ہے میڈیا کے تمام ورکرز کسی بھی خبر کی تصدیق کیلئے فوری ہماری ویب سائیٹ کا رخ کرتے ہیں، اور یہاں لگنے والی ہر خبر منٹوں، سیکنڈوں میں کراچی سے پشاور تک ہر میڈیا گروپ میں وائرل ہوجاتی ہے اور تھاٹ آف دا ڈے بن جاتی ہے،دیگر ویب سائیٹس بھی ہماری خبریں کئی دن بعد لگاتی ہیں جب کہ ٹاک شوز میں بھی ہماری ویب سائیٹ کی خبریں ڈسکس ہوتی ہیں ۔۔الحمدللہ۔۔ ہمارا مشن جاری ہے، جاری رہے گا۔۔ ہم جہاں غلط ہوں گے اپنی اصلاح کرینگے۔۔ ہماری کسی سے دشمنی ہے نہ ہم ذاتیات پر اترتے ہیں، خبر کو خبریت کے حساب سے اہمیت دیتے ہیں۔۔ اللہ پاک ہمیں ہماری کوتاہیوں اور غلطیوں پر قابو پانے کی توفیق عطافرمائے۔۔ آمین۔۔

(علی عمران جونیئر)

Facebook Comments

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں