Aamir liaquat Banned Date Extend by ISB Supreme Court 115

عامر لیاقت پرپابندی میں مزید توسیع

اسلام آباد ہائیکورٹ نے نفرت آمیز مواد پر مشتمل پروگرام پیش کرنے اور معاشرے میں تفرقہ پیدا کرنے کے الزام میں اینکر پرسن عامر لیاقت پر تاحیات پابندی لگانے کی درخواست واپس لینے کی استدعا مسترد کر دی ۔ دوران سماعت عدالت عالیہ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دئیے کہ سائل کے فرشتوں کو بھی نہیں پتہ کہ درخواست میں کیا لکھا ہے ، میرٹ پر درخواست کا فیصلہ کریں گے۔ فاضل جسٹس نے اینکر پر ٹی وی شوز میں کسی بھی طور شرکت پر پابندی کا حکم نامہ برقرار رکھتے ہوئے وفاق اوراینکر پرسن سے 15 روز میں جواب طلب کر لیا ہے۔ بدھ کو محمد عباس نامی شہری کی جانب سے اینکر پرسن پر تاحیات پابندی کے حوالے سے دائر درخواست کی سماعت کے موقع پر پیمرا نے اپنا جواب عدالت میں جمع کرایا۔ اس موقع پر درخواست گزار محمد عباس نے درخواست واپس لینے کی استدعا کی۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے درخواست گزار کے وکیل شعیب رزاق سے کہا کہ کبھی آپ پٹیشن کرتے ہیں، کبھی واپس لیتے ہیں۔عدالت میرٹ پر درخواست کا فیصلہ کریگی۔ اینکر پرسن پر تاحیات پابندی لگ سکتی ہے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے درخواست گزارسے استفسار کیا کہ آپ ٹی وی دیکھتے ہیں، جس پر درخواست گزار نے کہا کہ جی دیکھتا ہوں،فاضل جسٹس نے پوچھا اینکر پرسن کونسے چینل پر آ رہا ہے، درخواست گزار نے چینل کا نام بتایا تو فاضل جسٹس نے کہا کہ آپ کے فرشتوں کو بھی معلوم نہیں، پٹیشن میں کیا لکھا ہے۔ بعد ازاں عدالت نے اینکر پرسن پر ٹی وی شوز میں کسی بھی طور شرکت کے خلاف حکم امتناع میں توسیع کرتے ہوئے درخواست واپس لینے کی استدعا مسترد کر دی اور وفاق اور اینکر پرسن کو 15 روز میں جواب داخل کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

Facebook Comments

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں